انتباہ: یہ ارٹیکل مصنف کی اجازت کے بغیر نقل نہیں کیا جاسکتا۔ یہ عمل قنانونً جرم ہے۔        

پاکستان کی سیاسی تاریخ اس بات کی گواه ہے کے عام   انتخابات آنے سے قبل سیاسی ماحول یکسر تبدیل ہو جاتاہے سیاسی مخالفت بڑھ جاتی ہے اور مختلف سیاسی جماعتیں ایک دوسرے پر تنقید کر کے عوام کی نظر میں اپنا تاثر بہتر کرنے کی کوشش کرتی ہے جبکے عوام اس خیال میں کهوجاتے ہے کے گویا عام انتخابات کے بعد خوشحالی ہی خوشحالی ہو گی. فل وقت پاکستان میں  سیاسی ماحول گرم ہے انتخابات میں آخری سال پڑا ہے سیاسی جماعتیں ایک دوسرے پر تنقید کر کے یہ بات باور کرانا چاہتی ہے کے ہم ہی عوام کے اصّل حامی و وفادارہےآئے میں اپنے قارئینکی توجہ چند حقائق کی طرف دلاؤ                                                                  

سب سے پہلی بات تو یہ کے پاکستان میں حقیقی جمہوریت سرے سےموجود ہی نہیں . سیاسی جماعتوں میں چند شخصیات قابض ہے اگر ان افراد کو علحیدہ کر دیا جاۓ تو ان سیاسی جماعتوں کی کوئی حیثیت نہیں موجودہ سیاسی جماعتتیں اتنی کمزور ہے کے وہ خود چند شخصیات کے بلبوتے پر چل رہی ہے جن سیاسی    جماعتوں کا وجود چند لوگوں پر مونحصر کرتا ہو وہ ملک کو کیا ترقی دیں گی بڑی سیاسی جماعتوں میں بادشاہت قائم ہے .بڑی سیاسی جماعتوں پر خاندانوں کا قبضہ ہے.یا پھر وہ جماعتیں ہے ہی ان خاندانوں کی .لہٰذا ان جماعتوں کا مفاد اصل میں اس خاندان کا مفاد ہوتا ہے جو اس جماعت کا بانی خاندان ہوتا ہے.لہٰذا ان جماعتوں  سےپاکستان کی بہتری کی امید رکھنا غلط ہے

       الیکشن 2018 قریب ہے اور یہی سیاسی جماعتیں عوامکو امید دلا رہی ہے .میرےمطابق آئندہ الیکشن کے بعد بھی کوئی بہتری نہیں آ ے گی اس کی وجہ یہ ہے کے پاکستان میں الیکشن اصلاحات نہیں ہوئی بلکہ کسی پارٹی نے کوشش ہی نہیں کی.لہٰذا برسوں پرانے نظام سے کیسےنئےلوگ سامنے آسکتے ہے

عدالت کے دباؤ کے بعد حکومت نے نہ چاہتے ہوے مردم شماری کروا تو دی مگر اس کے نتائج کا اعلان تاحال نہیںہوا .جب کے یہ مردم شماری صاف و شفاف تھی یا نہیں یہ بھی واضح نہیں

الیکشن2018 سے پہلے پورے پاکستان میں نئی حلقہ بندیاں ہونا تھی جو نہ ہو سکی لہٰذا بیس سال پرانی حلقہ بندیوں پر انتخابات کروا کر اگر ہماری قوم یہ سمجھ رہی ہے کے مسسائل حل ہو جاۓ گے تو اس معصومیت پر میں قربان جاؤ          

پاکستان میں احتساب احتساب کا بڑا شور مچا اور کہا گیا کے الیکشن 2018 سے قبل احتساب ہوگا اور نظام ٹھیک ہو گا لیکن ایسا نہیں ہوا بلکہ سیاسی آزادی اور سیاسی برداشت کم ہو گیا پاکستان کا انتخابی نظام دروست نہیں جو سیاسی جماعت پنجاب سے جیتتی ہے وہ وفاق میں حکومت بنا لیتی ہے کجا اس جماعت کو باقی صوبوں سے عوامی حمایت حاصل ہو یا نہ ہوں.لہٰذا ایسی حکومتکیسے پورے پاکستان کی ترجمان ہو سکتی ہے

           سنتاہوں بے گھروں کی بحالی کے واسطے “

       “کاغذپہ کچھ مکان بناےگئےتوھیں

                           

میں ٹوئٹر پر اس نام سے ہوں: @Abbashaider73     

    ایدیٹوریلسٹ : عبّاس حیدر

Advertisements